Voice News

یونان میں بحری جہاز کے حادثے میں سینکڑوں لاپتہ، 12 پاکستانیوں کو بچا لیا گیا

یونان: یونان سے ایک المناک واقعہ کی اطلاع ملی ہے جہاں تارکین وطن کا ایک جہاز المناک طور پر ڈوب گیا ہے، جس کے نتیجے میں 500 سے زائد افراد لاپتہ اور 78 افراد کی ہلاکت کی اطلاع ہے، جن میں چار پاکستانی شہری بھی شامل ہیں۔

تفصیلات کے مطابق جہاز کے ملبے میں پانچ سو سے زائد تارکین وطن تاحال لاپتہ ہیں جب کہ جاں بحق ہونے والوں کی تعداد 78 تک پہنچ گئی ہے جن میں شیخوپورہ سے تعلق رکھنے والے 4 پاکستانی بھی شامل ہیں جب کہ دو کا تعلق وزیر آباد سے ہے۔

ایک کامیاب ریسکیو آپریشن میں 104 افراد کو بچا لیا گیا جن میں 12 پاکستانی شہریوں کا تعلق پاکستان کے مختلف شہروں جیسے گوجرانوالہ، گجرات، شیخوپورہ، منڈی بہاؤالدین، سیالکوٹ اور آزاد کشمیر کے کوٹلی سے تھا۔ بچائے گئے گروپ میں بچے اور بالغ دونوں شامل ہیں۔

جاں بحق افراد کے اہل خانہ حکومت سے مطالبہ کر رہے ہیں کہ ان کے پیاروں کی باقیات کو وطن واپس لانے کے لیے فوری کارروائی کی جائے۔

یونان میں پاکستانی سفارتخانے نے پاکستانی شہریوں کو یقین دہانی کرائی کہ جہاز کے حادثے سے بچائے گئے 12 پاکستانیوں سے رابطہ ہو گیا ہے۔ حکومتی عہدیداروں نے 78 لاشوں کی بازیابی کی تصدیق کی ہے، جو فی الحال ڈی این اے تجزیہ کے ذریعے شناخت کی منتظر ہیں۔

یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ بدقسمت تارکین وطن کے جہاز میں 100 بچوں اور خواتین سمیت تقریباً 750 افراد سوار تھے۔ یہ جہاز 8 جولائی کی رات لیبیا سے اٹلی کے لیے روانہ ہوا تھا۔ یہ واقعہ لوڈنگ کے عمل کے دوران جہاز میں زیادہ رش کے باعث پیش آیا۔

جہاز کے تباہ ہونے کے بعد 78 تارکین وطن کی لاشیں نکالی جا چکی ہیں، جب کہ سینکڑوں لاپتہ ہیں۔ یونان نے اس سانحے کو تاریخ کے مہلک ترین جہازوں میں سے ایک کے طور پر تسلیم کرتے ہوئے تین روزہ سوگ کا اعلان کیا ہے۔

مغربی میڈیا کے مطابق جہاز میں پاکستانی، افغانی، مصری، شامی اور فلسطینی شہری سمیت مختلف قومیتوں کے مسافر سوار تھے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے